سب جھمیلے ختم، گر انفاس ختم

کاشف شکیل شعریات

سب جھمیلے ختم، گر انفاس ختم

ہجر کا خدشہ، لقا کی آس ختم


ضابطے، رسم و رواج اور قاعدے

ختم سب، عہد و وفا کا پاس ختم


دھڑکنیں، جذبات و فرمودات بھی

تلخ و شیریں کا بھی اب احساس ختم


نطق کا لب سے تعلق بھی فنا

اور قلم سے رشتہِء قرطاس ختم


سانس کی ڈوری جو ٹوٹی جسم سے

خسروی بھی ختم اور بن باس ختم


ہے دعا کاشف کی، روز حشر میں

حوض کوثر سے ہو اس کی پیاس ختم


2
آپ کے تبصرے

avatar
3000
2 Comment threads
0 Thread replies
0 Followers
 
Most reacted comment
Hottest comment thread
2 Comment authors
کے ایم جوہر خانخبیب حسن Recent comment authors
newest oldest most voted
خبیب حسن
Guest
خبیب حسن
بہت خوب برادرم❤️❤️❤️
کے ایم جوہر خان
Guest
کے ایم جوہر خان
ماشاء اللہ بہت خوب بڑے بھائی